مصیبت کے وقت تیر بہدف دعا

مسند احمد میں ہےحضرت ام سلمہؓ فرماتی ہیں، میرے خاوند ابوسلمہؓ ایک روز میرے پاس حضور ﷺ کی خدمت سے ہوکر آۓاور خوشی خوشی فرمانے لگے:آج تو میں نے ایک ایسی حدیث سنی ہے کہ میں بہت ہی خوش ہوا ہوں۔ وہ حدیث یہ ہے کہ جس کسی مسلمان کو کوئی تکلیف پہنچے اور وہ کہے : اللّٰھمہ اَجُرنیِ فِی مُصِیبَتِی وَاخْلُف لِی خَیرًمّنھَا۔ یعنی اے اللّٰہ مجھے اس مصیبت میں اجر دےاور مجھے اس سے بہتر بدلہ عطا فرماتو اللّٰہ تعالی اسے اجر اور بدلہ ضرور ہی دیتا ہے۔

حضرت ام سلمہؓ فرماتی ہیں : میں نے اس دعا کو یاد کر لیا ۔ اور جب ابو سلمہؓ کا انتقال ہوا تو میں نے اناللہ وانا الیہ راجعون پڑھ کر یہ دعا بھی پڑھ لی لیکن مجھے خیال آیا کہ بھلا ابو سلمہؓ سے بہتر شخص مجھے کون مل سکتا ہے؟ جب میری عدت گزر چکی تو میں ایک روز ایک کھال کو دباغت دے رہی تھی کہ آنحضرت ﷺ تشریف لاۓاور اندر آنے کی اجازت چاہی۔میں نے اپنے ہاتھ دھوۓ، کھال رکھ دی اور حضورﷺ سے اندر تشریف لانے کی درخواست کی، اور آپ کو ایک گڈی پر بٹھادیا آپ نے مجھ سے اپنے نکاح کرنے کی خواہش ظاہر کی۔میں نے کہا حضور! یہ تو بڑی خوش قسمتی کی بات ہے لیکن اول تو میں بڑی باغیرت عورت ہوں، ایسا نہ ہوکہ آپ کی طبیعت کے خلاف کوئی بات مجھ سے سرزرد ہوجاۓاور اللّٰہ کے یہاں عذاب ہو۔دوسرا یہ کہ میں عمر رسیدہ ہوں۔تیسرے بال بچوں والی ہوں۔آپ نے فرمایا سنو ،ایسی بےجا غیرت اللّٰہ تمہاری دور کردےگااور عمر کے لحاظ سے میں بھی چھوٹی عمر کا نہیں اور تمہارے بال بچے میرے ہی بال بچے ہیں۔ میں نے یہ سن کر کہا پھر حضور ! مجھے کوئی عذر نہیں۔ چنانچہ میرا نکاح اللّٰہ تعالی کے نبی ﷺ سے ہو گیا اور مجھے اللّٰہ تعالی نے اس دعا کی برکت سےمیرے میاں سے بہت بہتر یعنی اپنا رسول عطا فرمایا۔

مسند احمد میں حضرت علیؓ سے مروی ہےکہ رسولﷺ نے فرمایا: جس کسی مسلمان کو کوئی رنج و مصیبت پہنچے اس پر گو ذیادہ وقت گزر جاۓپھر اسے یاد آۓاور وہ : اناللّٰہ پڑھے تو مصیبت کے وقت جو اجر ملا تھا وہی اب بھی ملے گا ۔ابن ماجہ میں ہے حضرت ابو سنانؒ فرماتے ہیں: میں نے اپنے ایک بچے کو دفن کیا ۔ابھی اس کی قبر میں سے نہ نکلا تھا کہ ابوطلحہ خولانیؓ نے میرا ہاتھ پکڑ کر مجھے نکالا اور کہا سنو!میں تمہیں ایک خوش خبری سناؤں،رسول اللّٰہؐ نے فرمایا ہے کہ اللّٰہ ملک الموت سے دریافت فرماتا ہے کہ تونےجب میرے بندے کی آنکھوں کی ٹھنڈک اور اس کے کلیجہ کا ٹکڑا چھین لیا تو اس کا ردعمل کیا تھا؟ ملک الموت کہتے ہیں اے اللّٰہ اس نے آپ کی تعریف کی اور اناللّٰہ پڑھا۔ اللّٰہ تعالی فرماتا ہے کہ اس کے لئے جنت میں ایک گھر بناؤاور اس کا نام بیت الحمد رکھو۔‍

Share on facebook
Facebook
Share on twitter
Twitter
Share on linkedin
LinkedIn
Share on whatsapp
WhatsApp

Leave a Reply

Your email address will not be published.

One reply on “مصیبت کے وقت تیر بہدف دعا”

  • June 23, 2022 at 6:00 pm

    Youtube ki id kyu nahi rakhe jab sab social media handlr the yaha to